دنیا کی سب سے بڑی سائنسی دستاویزی صحت کی ویب سائٹ آپ کے خاندان کی خوشی اور صحت کے لئے، سائنس اور ایمان کے ساتھ ہم توازن کرتے ہیں

77195494

السر اور پیٹ کے درد میں سونف کا عرق

السر اور پیٹ کے درد میں سونف کا عرق


السر اور پیٹ کے درد میں سونف کا عرق  دونوں زیتون کے تیل اور سیب کے سرکے میں  السر اور پیٹ کے درد میں موثر ہے۔

کیا آپ کبھی پیٹ کے درد میں مبتلا ہوئے ہیں؟ کیا آپ کو کھانا کھانے کے بعد یا خالی پیٹ شدید درد افسردہ کرتا ہے یہاں تک کہ جب آپ سو رہے ہوں؟ کیا السر آپ کو جگاتا ہے اور آپ کی روزمرہ کی سرگرمی میں چڑچڑا پن  کرتا ہے؟ ہم آپ کو ان علامات سے آرام پہنچانے کے لئے سونف کا عرق دونوں مقامی زیتون کے تیل اور سیب کے سرکے میں استعمال کی پیش کش کرتے ہیں۔

معدہ پیٹ کی آنت کی نالی (نظام انہضام) کی حصوں میں  سب سے اہم حصہ ہے،  یہ پیٹ کے اوپر بائیں طرف کونے میں اور براہ راست  چھاتی یا پسلی کے پنجرے کے نیچے پایا جاتا ہے۔ یہ ایک پٹھا ہے اور پیٹ کی نالی کا کھوکھلا حصہ ہے۔ یہ غذائی نالی اور چھوٹی آنت کے درمیان موجود ہوتا ہے۔ اس کے خفیہ ہاضمے کے انزائم اور معدے  کے ایسڈ کھانے کے ہاضمے میں مدد کرتے ہیں۔ یہ جزوی طور پر ہضم شدہ غذا (کائم) کو  ڈیوڈینم اور آنتوں  میں پہچانتے ہیں۔ معدے کے جوس کے ھائیڈروکلورک ایسڈ کا شکریہ، یہ کسی بھی مائیکرو آرگنائزم کوصاف کرتا ہے جو کھانے کے ساتھ داخل ہوسکتے ہیں۔ یہ ھائیڈروکلورک ایسڈ سے حاصل ہوتا ہے جو بیکٹیریا کو مارتا یا روکتا ہے اور پروٹئیزز کے لئے کام کرنے کے دو ایسڈک pH فراہم کرتے ہیں۔ اہم کرداروں میں ایک  معدہ ہضم اور ھائیڈرولائز پروٹین کے لئے کردار ادا کرتا ہے جب کہ چربی اور کاربوہائیڈریٹس آنتوں میں ہضم ہوتے ہیں۔(Kong et.al., 2008)  

معدے کا ایناٹومیکل ڈھانچہ اپنی سطحوں اور خلیوں میں اور اپنی شکل اور مقام میں بھی منفرد ہے۔ حقیقت کے برخلاف کہ ہائیڈروکلورک ایسڈ جلد کے لئے تحلیل کرتا ہے اور جلد کی سطح کو نقصان پہنچاسکتا ہے، معدے کا جوس جو خاص طور پر ہائیڈروکلورک ایسڈ پر مشتمل ہوتا ہے جو معدے کی اندرونی سطحوں کو تکلیف یا نقصان نہیں پہنچا سکتا ہے۔ پروستاگلینڈنس کا شکریہ کہ اللہ تعالیٰ نے معدے کے جوس اور معدے کے مکوسہ کے بلند محلول میں مخفی کرتے ہوئے بنایا ہے۔ جو معدے کو پروٹین کے ہاضمے کے لئے قابل کرتا ہے بغیر پروٹین کے ڈھانچوں کونقصان پہنچائے جو معدے کی بلغمی دیوار کو بناتا ہے۔ پس، لائنوں میں محفوظ مکوسل سطحیں اور محفوظ پروسٹاگلینڈن سطحیں ہیں جو معدے کی اندرونی تہہ پر چڑھی ہوتی ہےجو اس کام کے لئے معدے کو محفوظ بنانے میں حصہ لیتی ہیں۔ "یہ تو خدا نے پیدا کیا ہے تو مجھے دکھاؤ کہ خدا کے سوا جو لوگ ہیں اُنہوں نے کیا پیدا کیا ہے؟ حقیقت یہ ہے کہ یہ ظالم صریح گمراہی میں ہیں"۔ (لقمان 11)

معدے کے السر کو ظاہر ہونے میں دوعوامل میں سے ایک عنصر ہوسکتا ہے۔ پہلا معدے کی ہاضمے کی طاقت کے بڑھانے سے  جس سے ایسڈز  کے گاڑھے محلول اور جوس بڑھتے ہیں۔ ہم متوازی غذائی نظام میں دیکھتے ہیں کہ یہ خون کی تیزابیت کو بڑھانے کی وجہ بن سکتے ہیں، جہاں معدہ خون سے انہیں جذب کرتے ہوئے ایسڈز بناتے ہیں۔ اس کے مطابق، خون میں زائد تیزابیت معدے کے جوس میں زائد ایسڈز کے گاڑھے محلول ہوتے ہیں۔ پس، یہ ڈیوڈینل السر کا باعث بنے گا جو معدے میں ایسڈز کے گاڑھے محلول کے بڑھنے سے جڑے ہوتے ہیں۔ 

السر میں مبتلا ہونے کے پیچھے کئی عوامل ہیں۔ ان میں سب سے اہم  ایک بیکٹیریائی ہیلی کوبیکٹر پائیلوری کا انفیکشن ہے، جو معدے کی بلغمی تہہ اور چھوٹی آنت کو کمزور کرتا ہے۔ مریضوں کی اکثریت میں، معدے کی اندرونی تہہ کی مکوس تہوں میں ان بیکٹیریا کی موجودگی اور دوبارہ تیاری معدے میں یا ڈیوڈینم میں السر کا باعث بنتی ہے۔اس کے ساتھ ساتھ معدے پرورم آنے کی اہم وجہ ہوتی ہے اور معدے کا کینسر بھی ہوتا ہے کیوں کہ ایچ۔پائیلوری خاص انزائم  سے چھپاتے ہوئے جو ایسڈ سے محفوظ ہوتے ہیں معدے کے ایسڈز کے ساتھ حاصل ہوسکتے ہیں۔(Veldhuyzen van Zanten et.al., 1994)  

اس  کے علاوہ، یہ بیکٹیریا ایریٹیبل باول سنڈروم سے جڑا ہوتا ہے۔

زولنگر-ایلیسن سنڈروم پیٹ کے السر کا باعث ہونے میں اہم کردار ادا کرتا ہے۔ یہ ایک سنڈروم ہے جو گسٹرین  ہارمون کے بنانے کے ساتھ خصوصیت رکھتا ہے۔ یہ ہارمون جی خلیوں سے خفیہ ہوتے ہیں جو معدے میں پائے جاتے ہیں یہ معدے میں یا ڈیوڈینم میں پیریٹل خلیوں کو متحرک کرتے ہیں ہائیڈروکلورک ایسڈ کی تیاری کو بڑھانے کا باعث بنتا ہے جس سے  پیٹ میں السر ہوتا ہے۔(Griffin et.al., 1991) 


حالیہ مطالعات دیکھاتے ہیں کہ نفسیاتی دباؤ، پریشانی اور اعضابی تناؤ نمایاں طور پر معدے کے ایسڈ کے اخراج کے اضافے میں حصہ لیتے ہیں ، جو السر کا باعث بنتا ہے ۔(Levenstein, 1998) 
اس کے ساتھ سگریٹ نوشی، شرآب نوشی اور کھانے کی غیر صحت مند عادات جیسا کہ چائے، کافی اور مصالحوں کا ضرورت سے زائد استعمال بھی السر کا باعث  ہے۔ ہم السر کی پیچیدگیوں سے بچنے کے لئے قدرتی اشیاء کے استعمال کی تجویز کرتے ہیں جس کی ہم پہلے ہی وضاحت کرچکے ہیں۔ جڑی بوٹیوں کے عرقیات میں ایک سب سے اہم سونف کے عرق میں قدرتی پاک زیتون کا تیل اور سونف کے آبی عرق میں قدرتی سیب کے سرقے کے ساتھ جو اللہ تعالیٰ نے ہمیں معدے کے السر کے علاج کے لئےعطا فرمایا ہے۔
یہ معلوم ہوا تھا کہ سونف کا غالب جز انیتھول جو مکوس تہہ کی اور معدے کی مکوس جھلی سے بلغم کی نسل افزائش کا مؤثر  جزہے جو دفاع کو بڑھاتا ہے اور معدے کی حفاظتی تہوں کی موٹائی میں اضافہ کرتا ہے۔ اس کے علاوہ   سونف کے عرق میں انیتھول کا جزمعدے کے جوس اور pH کے حجم  کی کمی میں نمایاں اثر ڈالتا ہے ، جو مریضوں کے معدے کے السر کی نمایاں مددکرتا ہے۔(Koriem, 2015) 
 
تجرباتی مطالعہ جو 2007 میں کیا گیا اور دی ورلڈ جرنل آف گیسٹروانٹرولوجی میں شائع ہوا جس میں ایک چوہوں کے گروہ کو زہریلے کیمیکل دئیے گئے تھے اینڈومیتھاسن کے زائد اجزاء کے ساتھ، جہاں اینڈومیتھاسن ایک سب سے زبردست سوزش کے خلاف اور درد کو کم کرنے کی دوا   ہے اور  یہ معدے کے السر ہونے کے لئے NSAIDSسے زیادہ مؤثر ہے جس کا مقصد چوہوں میں السر پھیلانا تھا۔ ان چوہوں کو آبی سونف کا عرق خوراک کے طور پر دیا گیا۔ اس طرح، چوہوں میں معدے  کے ٹشوز کا ہسٹولوجیکلی معائنہ کیا گیا تھا۔ یہ دیکھا گیا تھا کہ اینڈومیتھاسن اور نقصان دہ کیمیکلز کے خلاف سونف کاآبی عرق معدے کے مکوسہ کے کٹاؤ سے بچانے میں نمایاں کردار اداکرتا ہے ۔(Al Mofleh et.al., 2007)  
چونکہ ہم اپنے متوازی غذائی نظام پر یقین کرتے ہیں کہ ایک چیز سے علاج کافی نہیں ہے باہمی تعاون کی حقیقت کی وجہ سے جسے ہم نے قرآن پاک سے دریافت کیا، جہاں تمام عبارتیں اور آیات میں غذا اور پینے کا ذکر جمع میں اور باہمی تعاون سے کیا گیا ہے نہ کہ واحد کا۔جب کہ ہماری معیادی بیماریوں کا میکانزم تبدیل ہوتا ہے، اسے مختلف مرکبات، غذاؤں اور میکانزم میں ہونا چاہئیے، جو بیماریوں کے میکانزمز کے خلاف دفاعی عمل کرتے ہیں۔ اسی لیے ہم دیکھتے ہیں کہ قرآن پاک میں کسی ایک غذا کا ذکر نہیں کیا گیا بلکہ انکا  ذکر گروہوں میں کیا گیا اور اس میں میڈیکل کے باہمی تعاون کے اصول کے ساتھ مکمل ہم آہنگی ہے۔ پھر کیوں ہم جڑی بوٹیوں کو زیتون کا تیل اور سیب کے سرکے کے اندر شامل کرنا چاہتے ہیں؟ اس کے پیچھے قرآن کےراز کیا ہیں؟ 

اپنی مہارت اور تجربے کی بنیاد پر جو ہم نے قرآن پاک  میں باہمی تعاون کے اصول کو استعمال کر کے حاصل کی ہے ہم قدرتی پاک زیتون کے تیل میں سونف کے عرق کے استعمال کوتجویز کرتے ہیںّ ۔ یہ ثابت ہوچکا ہے کہ زیتون کا تیل بذات خود معدے کے السرکے خاتمے میں مدد کرتا ہے، یہ معدے اور خون کی نسوں کی جھلی میں چربی جمع ہونے سے بچانے پر کام کرتا ہے۔یہ جانا جاتا ہے کہ یہ ذخیرہ معدے میں السر کے خلاف موثر ہے۔(Billings, 2013)  
ہم قدرتی سیب کے سرکے میں سونف کے آبی عرق کے استعمال کی تجویز کرتے ہیں کیوں کہ یہ ثابت ہوچکا ہے کہ قدرتی سیب کے سرکے کے کم گاڑھے محلول کا استعمال السر کے خلاف لڑائی میں ہاضمے کے نظام کو متحرک کرتا ہے۔
کئی قارئین حیران ہوسکتے ہیں کہ کیسے سرکہ کسی ذائقے دار ایسڈ کے ساتھ پیٹ اور ڈیوڈینل السروں کے علاج کے لئے استعمال کرسکتے ہیں۔ مختلف مطالعات کی بنیاد پر، ہمیں یقین ہے کہ قدرتی سیب کا سرکہ نظام انہضام کے لئے ایک بہترین قدرتی موافق شے ہے۔ اس کا معدے کے السروں کے علاج میں اور نقصان پہنچانے والے بیکٹیریا سے لڑنے میں نمایاں کردار ہے جو ہوسکتا ہے معدے کے اندر یا ڈیوڈینم کے اندر ہضم کرتا ہو اور السرکے تمام عوامل سے مقابلہ کرتا ہے۔
اللہ کامیابی کا حاکم ہے                                                  
 ڈاکٹر جمیل القدسی

References

Al Mofleh, I. A., Alhaider, A. A., Mossa, J. S., Al-Soohaibani, M. O. & Rafatullah, S. 2007. Aqueous suspension of anise “pimpinella anisum” protects rats against chemically induced gastric ulcers. World journal of gastroenterology: WJG, 13, 1112.

Billings, S. 2013. The big book of home remedies, LULU Press.

Griffin, M. R., Piper, J. M., Daugherty, J. R., Snowden, M. & Ray, W. A. 1991. Nonsteroidal anti-inflammatory drug use and increased risk for peptic ulcer disease in elderly persons. Annals of Internal Medicine, 114, 257-263.

Kong, F. & Singh, R. P. 2008. Disintegration of solid foods in human stomach. Journal of Food Science, 73, R67-R80.

Koriem, K. M. M. 2015. Approach to pharmacological and clinical applications of anisi aetheroleum. Asian Pacific Journal of Tropical Biomedicine, 5, 60-67.

Levenstein, S. 1998. Stress and peptic ulcer: Life beyond helicobacter. BMJ : British Medical Journal, 316, 538-541.

Mcgrath, S. 2015. Apple cider vinegar for health and beauty: Recipes for weight loss, clear skin, superior health, and much moreñthe natural way, Skyhorse Publishing.

Veldhuyzen Van Zanten, S. J. & Sherman, P. M. 1994. Helicobacter pylori infection as a cause of gastritis, duodenal ulcer, gastric cancer and nonulcer dyspepsia: A systematic overview. CMAJ: Canadian Medical Association Journal, 150, 177-185.




videos balancecure

اسے دیں



ہمارے خبری خطوط کی تائید کریں


تبصرے

کوئی تبصرے نہیں

تبصرہ شامل کریں

Made with by Tashfier

loading gif
feedback