دنیا کی سب سے بڑی سائنسی دستاویزی صحت کی ویب سائٹ آپ کے خاندان کی خوشی اور صحت کے لئے، سائنس اور ایمان کے ساتھ ہم توازن کرتے ہیں

87524119

زیتوں کا تیل اور سیب کے سرکے میں ڈوبے گندم کی گھاس بھوک پر قابو پانے اور وزن کم کرنے میں اہم کردار

زیتوں کا تیل اور سیب کے سرکے میں ڈوبے گندم کی گھاس بھوک پر قابو پانے اور وزن کم کرنے میں اہم کردار



زیتوں کا تیل اور سیب کے سرکے میں ڈوبے گندم کی گھاس بھوک پر قابو پانے اور وزن کم کرنے میں اہم کردار اداکرتی ہے۔

"کیا آپ تمام وقت بھوک محسوس کرتے ہیں اور اپنی بھوک پر قابو نہیں پاسکتے ہیں؟ کیا آپ کو ہر وقت کھانے کی خواہش ہوتی ہے؟ کیا آپ کو لگتا ہے کہ آپ مزیدار کھانے کے آگے کمزور پڑ جاتے ہیں؟ کیا آپ کا اضافی وزن آپ کو تھکا رہا ہے؟ اور آپ باوجود کوششوں اور آزمائشوں کے آپ وزن کم نہیں کر سکتے ہیں؟


 مقامی ورجن زیتون کے تیل میں گندم کی گھاس کا چکنا عرق اور سیب کے سرکے میں گندم کی گھاس کاآبی عرق ان شکایتوں پر قابو پانے میں مدد کرتا ہے۔(Razquin et.al., 2009)  


گندم کی گھاس تبدیلی کی ایک حالت بڑھنے کے درمیان دانے سے بالیوں تک۔ بیج کے نمو سے اور 10-20 سینٹی میٹر لمبی پیداوار کا اگنا گندم کی گھاس کہلاتا ہے۔گندم گھاس کی کٹائی اکثر گندم کے زرد ہونے سے پہلے ہی کرلی جاتی ہے اور دانے کی نشونما میں بالی سے پہلے۔ اس کا مطلب ہے کہ گھاس کاٹی جاتی ہے جب وہ ہری ہوتی ہے۔ مطالعہ اور تجربات ثابت کرتے ہیں کہ گندم کی گھاست ایک بہترین خوراک ہے اور انسان اور جانورکے لئے صحت کے فائدوں سے بھرپوہے۔اس کی خصوصیت اجزاء  کی مقدار پر دوہری کوشش کے ساتھ ہے۔ ایک کھانے کا چمچ گندم کی گھاس کہیں زیادہ  مقدار کے اجزاء اور قدرتی شیاء رکھتی ہے ایک کھانے کے چمچ گندم کی گھاس سے۔ یہی وجہ جس پر قرآن پاک کی درج ذیل آیت ہے۔ 

جو لوگ اپنا مال خدا کی راہ میں خرچ کرتے ہیں ان (کے مال) کی مثال اس دانے کی سی ہے جس سے سات بالیں اگیں اور ہر ایک بال میں سو سو دانے ہوں اور خدا جس (کے مال) کو چاہتا ہے زیادہ کرتا ہے۔ وہ بڑی کشائش والا اور سب کچھ جاننے والا ہے"

گندم کی گھاس کی سب سے اہم خصوصیت اس کے بہت سے فوائد اور مختلف اہلیت کی خصوصیات میں ہے کہ یہ بھوک  کے احساس کو روکنے میں اہم کردار اداکرتی ہے۔ بھوکے ہونے کا احساس کھانے کی خواہش کو بڑھاتا ہے اور نتیجے میں موٹاپا بڑھتا ہے۔ ایک مطالعہ جو ورلڈ جنرل آف فارمیسی اند فارماسیوٹیکل سائنس میں 2016 میں شائع ہوا جو ثابت کرتا ہے کہ گندم کی گھاس میٹابولزم کو فعال کرنے کے اجزاء اور جرثوموں (انزائم) سے بھرپور ہوتی ہے۔ یہ اسے جسم میں محفوظ چربی کو جلانے میں ایک فعال جز بناتا ہے۔ محفوظ چربی کاربوہائیڈریٹ اور چکنائی سے بھری غذائیں کھانے سے ہوتی ہے۔ جسم میں چربی کی اضافی مقدار محفوظ ہوتی ہے بطور ٹرائی لائی سیریڈز جو موٹاپے اور وزن بڑھنے کا باعث بنتی ہے۔(Sharma et.al., 2016) 

مزید گندم کی گھاس کا ہر چائے کا چمچ میں 10 کیلوریز پر مشتمل ہوتا ہے تو یہ جسم کو بائیلوجیکل باہمی عمل کے لئے ضروری توانائی فراہم کرتا ہے۔ اس کے ساتھ ساتھ گندم کی گھاس چکنائی اور کولیسٹرول سے حاصل چیزوں سے پاک ہوتی ہے اور جو اسے وزن کم کرنے کے عمل میں مدد کرکےمنفرد گھاس بناتی ہے 

تجرباتی مطالعے جو چوہوں پر 2015 میں کیا گیا  اور دی جرنل آف بائیو سائنس، بائیو ٹیکنالوجی اور بائیو کیمسٹری میں شائع ہوا یہ ثابت کرتا تھا کہ گندم کی گھاس کا آبی عرق وزن گھٹانے، خون میں تمام کولیسٹرول کی سطح کو، تمام چربی ایسڈز اور ٹرائی لی سیرائیڈز کو کم کرتا ہے اور انہیں جگر اور چربی کے ٹشوز میں جمع ہونے سے روکتی ہے۔(Im et al., 2015) 

"جب سے ہم اپنی متوازی غذائی نظام پر یقین کررہے ہیں کہ کسی ایک چیز کا علاج کافی نہیں ہے باہمی تعاون کی حقیقت کی وجہ سے جسے ہم نے قرآن پاک سے دریافت کیا، جہاں تمام عبارتیں اور آیات میں غذا اور پینے کا ذکر جمع  میں اور باہمی تعاون سے کیا گیا ہے نہ کہ واحد میں۔ جب کہ ہماری معیادی بیماریوں کا میکانزم تبدیل ہوتا ہے، اسے مختلف مرکبات , غذائیں اور میکانزم  میں ہونا چاہئیے، جو بیماریوں کے میکانزمز کے خلاف مدافعانہ عمل کرتے ہیں۔اسی لیے ہم دیکھتے ہیں کہ قرآن پاک میں کسی ایک غذا کا ذکر نہیں کیا گیا بلکہ انکا  ذکر گروہوں میں کیا گیا اور یہ میڈیکل کے باہمی تعاون کے اصول کے ساتھ مکمل ہم آہنگ ہے۔ پھر ہم کیوں زیتون کے تیل اور سیب کے سرکے میں جڑی بوٹیوں کا عرق شامل کرتے ہیں؟ اس کے پیچھے قرآن پاک کی کیا حکمت پوشیدہ ہے؟ 

ہماری مہارت اور تجربات کی بنیاد پر جو ہم نے قرآن کے باہمی تعاون کے اصول کے ذریعے اپنا کر کے حاصل کی، ہم تجویز کرتے ہیں کہ کنواری مقامی زیتون کا تیل اور سیب کے سرکے میں گندم کی گھاس کے عرق کو وزن کو کم کرنے کےبہتر نتائج کے لئے استعمال کریں۔ دونوں لینولیک ایسڈ اور لینولینک ایسڈ زیتون کے تیل میں موجود ہوتے ہیں۔ یہ لازمی چربی کے ایسڈز ہیں کیوں کہ یہ انسانی جسم میں نہیں بن سکتے ہیں۔ دونوں چربی کے ایسڈزخلیوں (مٹوکونڈریا) میں  توانائی بنانے کی اکائیوں پر کام کرتے ہیں۔ نتیجے میں، وہ مٹوکونڈریا میں الیکٹرون ٹرانسپورٹ چین کی سرگرمیوں کو بڑھاتے ہیں جس کے باعث خلیے کے اندر توانائی کی پیداوار بڑھ جاتی ہے۔ جس کے نتیجے میں میٹابولزم کی شرح میں اضافہ ہوگا۔ یہ اصول بتاتا ہے کہ میٹا بولزم کی شرح  میں اضافہ توانائی کی پیداوار کا باعث ہوگا جس سے چربی جلنے کی شرح کاربوہائیڈریڈ جلنے کی شرح سے زیادہ ہے۔ یہاں ہم یہ سمجھے کہ زیتوں کا تیل انسانی جسم میں چربی جلانے کے لئے ایک محرک ہے حالانکہ یہ چربی کے ایسڈ سے تعلق رکھتا ہے 
ایک کلینکل مطالعے(Kondo et.al. 2010)  نے سیب کے سرکے سے وزن میں، جسمانی پھیلاؤ اور کمر کے گھیر میں کمی کا نمایاں اصول ثابت کیا ہے۔ مزید اس سے خون میں ٹرائی گلی سریڈیس کی سطح میں کمی اور اس کام کا اثر سیب کے سرکے کی وجہ سے ہے جس سے میٹابولزم کی شرح میں اضافہ کیا (شکر اور چربی کا جلاؤ)


References:

Im, J.-Y., Ki, H.-H., Xin, M., Kwon, S.-U., Kim, Y. H., Kim, D.-K., Hong, S.-P., Jin, J.-S. & Lee, Y.-M. 2015. Anti-obesity effect of triticum aestivum sprout extract in high-fat-diet-induced obese mice. Bioscience, Biotechnology, and Biochemistry, 79, 1133-1140.

Kondo, T., Kishi, M., Fushimi, T., Ugajin, S. & Kaga, T. 2009. Vinegar intake reduces body weight, body fat mass, and serum triglyceride levels in obese japanese subjects. Bioscience, biotechnology, and biochemistry, 73, 1837-1843.

Razquin, C., Martinez, J., Martinez-Gonzalez, M., Mitjavila, M., Estruch, R. & Marti, A. 2009. A 3 years follow-up of a mediterranean diet rich in virgin olive oil is associated with high plasma antioxidant capacity and reduced body weight gain. European journal of clinical nutrition, 63, 1387-1393.

Sharma, R. M., Nair, A. T., Harak, S. S., Patil, T. D. & Shelke, S. P. 2016. Wheat grass juice—nature’s powerful medicine.


videos balancecure

اسے دیں



ہمارے خبری خطوط کی تائید کریں


تبصرے

کوئی تبصرے نہیں

تبصرہ شامل کریں

Made with by Tashfier

loading gif
feedback