دنیا کی سب سے بڑی سائنسی دستاویزی صحت کی ویب سائٹ آپ کے خاندان کی خوشی اور صحت کے لئے، سائنس اور ایمان کے ساتھ ہم توازن کرتے ہیں

77195494

سونف اور ذہنی دباؤ

سونف اور  ذہنی دباؤ


کیا آپ خوف میں مبتلا  ہیں؟ کیا یہ ہھیانک احساس آپ کی زندگی اور دوسرے لوگوں کے ساتھ ملنے پر اثر انداز ہوتا ہے؟ کیا یہ خوف کا دورہ ذہنی دباؤ، الجھن، توجہ دینے اور فیصلہ کرنے میں مشکل پیدا کرنے سے جڑا ہوتا ہے؟ کیا پسینے کا ضرورت سے زیادہ، آپ کے ہاتھوں میں پسینہ  اور سانس کا تیز چلنا اس خوف کے دورے سے جڑا ہوتےہیں؟ کیا آپ کے سونے میں خلل پیدا ہوتا ہے جب کہ آپ کمزور اور تھکا ہوا محسوس کرتے ہیں؟

خوف اور اللہ کے ذکر سے دوری، بیماری اور بڑھاپے کا خطرہ۔ ہم غذائی متوازن نظام پر یقین رکھتے ہیں کہ وہ جو اللہ کے ذکر اور اس کی یاد سے دور ہوتےہیں، چاہے اپنی زبانوں، اپنے دلوں یا ذہنوں سے انہیں بہت زیادہ خوف محسوس ہوتا ہے، لہٰذا خوف اور ڈر کی علامات آسانی سے ظاہر ہوجاتی ہیں جیسے کہ وہ چیزیں جو اسے پریشان کرتی ہیں ان کا پیچھا کرتی ہیں۔ اس لیے آپ ان میں بہت سے لوگوں کو اپنی زندگی میں ہر طرف اور ہر سطح کے بہت سے مسائل کے لئے زیادہ غیر محفوظ پاسکتے ہیں، اسی طرح وہ بیماریوں اور تیزی سے بڑھاپے کے لئے غیر محفوظ ہوتے ہیں تو ان میں تیزی سے قبل از وقت بڑھاپے کے اثرات نمایاں ہوسکتے ہیں۔ کیسے نہیں، اگر آپ جانتے ہیں کہ ان کے جسموں کے اندر مستقل کارٹیزون اور ایڈرینل کےاخراج کی تحریک واقع ہوتی رہتی ہےے۔ یہ دونوں ہارمون خلیوں کے لئے تباہ کن اور نمایاں طور پر دفاعی نظام کوکمزور کرتے ہیں اور یہ مریض کی صحت اور سماجی زندگی پر منفی اثر ڈالتے ہیں اور پس، اس سے دوسروں کے لئے پریشانیاں بڑھ جاتی ہیں۔ یہ ان کےکام  اور سماجی ماحول میں انہیں غیر فعال بناتے ہیں۔ خوف اور ذہنی دباؤ ایک ہی سکے کے دو رخ ہیں۔


اگر آپ خوف کے دوروں سے گزر رہے ہیں جو  ذہنی تناؤ اور بے چینی کی حالت سے جڑی ہے یا  خیالات کا بکھرنا،  ذہنی انتشار، غور کرنے میں مشکل سے جڑے ہوتے ہیں یا  یہ دورے نیند کی کمی سے جڑے ہوتے تھے  یا کچھ جسمانی علامات سے جیسا کہ سینے کا جکڑ جانا، دل کی دھڑکن کا تیز ہونا، بے ترتیب دھڑکن، سردرد، سر پر بوجھ محسوس ہونا، درد، بے چینی، بڑی آنت کے پھیلنے، کمر کے نچلے حصے میں درد، بھوک میں کمی یا دوروں کا پڑنا پسینے کی زیادتی ، ہاتھوں پیروں کا لرزنا یا بار بار   بیت الخلاء جانا۔(Shri, 2010)  

ہم آپ کو تمام  سونف  کے عرق  دونوں قدرتی کنواری زیتون کے تیل اور قدرتی سیب کے سرکے میں استعمال کرنے کی تجویز کا مشورہ دیتے ہیں۔ یہ آپ کو خوف سے آرام دلانے میں مدد کرے گا۔

2012 میں دی انٹرنیشنل جرنل آف فارمیسی اینڈ فارماسیوٹیکل سائنسز ایک مطالعہ شائع ہوا جس میں خوف اور دباؤ کے اثرات کے خلاف سونف کے اثر کا موازنہ ڈیاز پیام سے کیا۔ مطالعہ چوہوں کے ایک گروہ پر کیا گیا تھا، جسے  مطالعے کے دوران چار گروہوں میں تقسیم کیا گیا تھا۔ مطالعے کے دوران ان گروہوں میں سے ایک  کو ڈیازپیام دی گئی جب کہ بقیہ گروہوں کو سونف کا سفوف دیا گیاتھا  لیکن مختلف خوراکوں کے ساتھ۔ پھر چوہوں کو انفرادی طور پر دیکھنے کے لئے خوف کی کئی  آزمائشیں کی گئیں۔ مطالعے سے حیرت انگیز حقیقت   سامنے آئی کہ کچھ گروہوں پر سونف کے سفوف کا  بالکل ڈیازپیام ہی کی طرح کا اثر تھا  اور ڈیازپیام سے بہتر  خوف کو کم کرنے اور اس کی علامات کو ختم کرنے کا اثر ہوا تھا۔ ہمیں نہیں بھولنا چاہئیے کہ ڈیازپیام خوف اور بے خوابی کے لئے بطور  تریاق استعمال کرتے ہیں۔ مطالعہ میکانزم کو نہیں جان سکاجس پر سونف کے سفوف نے کام کیا  لیکن سونف میں پائے جانے والے فعال مرکبات  کو جاننے کے لئے مزید مطالعے کی تجویز دی گئی، جو کہ نیورونز اور نیوروٹرانسمیٹرز کی سطح پر کام کرتا ہے۔(Kishore et.al., 2012)  

ہمیں یقین ہے کہ سونف میں خوف کے مخالف اثرات خوف کی علامات کو ختم کرنے میں اینےتھول کی خصوصیات رکھتا ہے۔ یہ مطالعہ ظاہر کرتا ہے کہ اینے تھول کا اثر بغیر مضر اثرات کے ایسٹروجن  کے جیسا ہی ہے ۔(Dhar, 1995)  

ہمیں نہیں بھولنا چاہئیے کہ ایسٹروجن  کے اثر کی کمی اور خوف کے واقعہ ہونے کے درمیان تعلق ہے اسی طرح جیسے ایسٹروجن کی کم سطح  اور خوف کی بلند سطح  کے درمیان ایک تعلق ہے۔(Osterlund et.al., 2005)  


کسی بھی صورت حال میں  اس میدان میں ہمارا تجربہ ہے، ہم کہتے ہیں : ایسا لگتا ہے کہ سونف میں صرف  اینےتھول مرکب موجود ہوتا ہے، جو خوف کو کم کرنے میں مدد کرتا ہے۔  ہوسکتا ہے ایک دن آئے کہ خوف کے خلاف سونف میں ان مؤثرمرکبات کی  مزید دریافت ہو۔ سونف اور دوسری جڑی بوٹیاں نیاز بو  (ہر خوشگوار مہک والا پودا)سے سمجھی جاتی ہیں، جس کا  قرآن پاک میں ذکر کیا گیا ہے "اور اسی نے خلقت کے لئے زمین بچھائی۔ اس میں میوے اور کھجور کے درخت ہیں جن کے خوشوں پر غلاف ہوتے ہیں۔ اور اناج جس کے ساتھ بھس ہوتا ہے اور خوشبودار پھول"

چونکہ ہم اپنے متوازی غذائی نظام پر یقین کرتے ہیں کہ ایک چیز سے علاج کافی نہیں ہے باہمی تعاون کی حقیقت کی وجہ سے جسے ہم نے قرآن پاک سے دریافت کیا، جہاں تمام عبارتیں اور آیات میں غذا اور پینے کا ذکر جمع میں اور باہمی تعاون سے کیا گیا ہے نہ کہ واحد کا۔جب کہ ہماری معیادی بیماریوں کا میکانزم تبدیل ہوتا ہے، اسے مختلف مرکبات، غذاؤں اور میکانزم میں ہونا چاہئیے، جو بیماریوں کے میکانزمز کے خلاف دفاعی عمل کرتے ہیں۔ اسی لیے ہم دیکھتے ہیں کہ قرآن پاک میں کسی ایک غذا کا ذکر نہیں کیا گیا بلکہ انکا  ذکر گروہوں میں کیا گیا اور اس میں میڈیکل کے باہمی تعاون کے اصول کے ساتھ مکمل ہم آہنگی ہے۔ پھر کیوں ہم جڑی بوٹیوں کو زیتون کے تیل اور سیب کے سرکے میں شامل کرنا چاہتے ہیں؟ اس کے پیچھے قرآن کےراز کیا ہیں؟

اپنی مہارت اور تجربے کی بنیاد پر جو ہم نے قرآن پاک  میں باہمی تعاون کے اصول کو استعمال کر کے حاصل کی ہے، ہم کنواری زیتون کے تیل میں سونف کے چکنے عرق کو استعمال کرنے کی تجویز دیتے ہیں۔

ایک مطالعہ جو 2013 میں جرنل آئی آیس آر این فارماکولوجی میں شائع ہوا   جس میں پایا گیا تھا کہ خوف اور گھبراہٹ  کے خلاف زیتون کے تیل کا   اثر لینولئیک ایسڈ کی خصوصیات رکھتا ہے۔مطالعہ ظاہر کرتا ہے کہ چوہوں پر تجربے کے لئے زیتون کا تیل بار بار معدے میں جانے سے جو کہ لینولیک ایسڈ پر مشتمل ہوتا ہے جو دونوں نیوروٹرانسمیٹرز 5-ہائیڈروآکسی ٹرائیپٹا مائن اور ڈوپامائن کے میٹابولزم کو بدلنے کے لئے قابل تھا، جو زیتون کے تیل کو مختلف جہتوں پر کئی اثرات  دیتا ہے۔ پہلایہ اس میکانزم کے ذریعے نیورونز کو محفوظ کرسکتا ہے۔دوسرا یہ چوہوں کے رویے کو بہتر کرسکتا ہے جو زیتون کا تیل لیتے ہیں۔ تیسرا جو مطالعے کا نتیجہ ہے کہ زیتون کے تیل کا اکثر استعمال خوف اور ذہنی دباؤ کے علاج میں اہم کردار رکھتا ہے۔(Perveen et.al., 2013)  

قدرتی سیب کے سرکے کا کردار، جو کہ  سونف کے آبی عرق کا محافظ ہے، جیسےخوف کے خلاف لیبارٹری کے جانور کی بہتر ہوتی ذہنی حالت کا مظاہرہ کیاگیا تھا۔ یہ جگر کو ٹاکسن سے نجات دلانےمیں مدد کرتا ہے اور ہاضمہ کے عمل کے دوران پروٹینز کے میٹابولزم کو بہتر کرنے میں مدد کرتا ہے اور انہیں امینو ایسڈز بشمول ٹرائیپ ٹیفان میں تبدیل کرنے میں مدد کرتا ہے۔(Holzapfel, 2014) 

جسم میں ضروری ایسڈز میں سے ایک ٹرائیپ ٹیفان ہے جس سے جسم  کو تشکیل نہیں دیا جا سکتا ہے لیکن اس کے لئے اسے تیار کرنا پڑتا ہے۔ یہ امینو ایسڈ انسان کی نفسیاتی حالت کو قابو  کرنے میں اہم کردار ادا کرتی ہے، کیوں کہ یہ خام مال ہے جس سے سیروٹونم تیار ہوتا ہے (جسے خوشی کے ہارمون سے بھی جانا جاتا ہے)۔(Schaechter et.al., 1989)  

یہاں ملانے کا اصول اور میڈیکل  باہمی تعاون  آتا ہے  سونف کے آبی عرق اور قدرتی سیب کے سرکے کے درمیان جن کے ایک جیسے اثرات ہوتے ہیں لیکن مختلف میکانزم کے ساتھ اور ان کا ملاپ ہمیں خوف میں کمی کے لئے مزید فوائد دیتا ہے اس سے کہ اگر ہمیں ان میں سے کسی کو اکیلے لیں۔


References:
Dhar, S. 1995. Anti-fertility activity and hormonal profile of trans-anethole in rats. Indian journal of physiology and pharmacology, 39, 63-63.

Holzapfel, C. 2014. Weight loss and good health with apple cider vinegar, Book Publishing Company.

Kishore, R. N., Anjaneyulu, N., Ganesh, M. N. & Sravya, N. 2012. Evaluation of anxiolytic activity of ethanolic extract of foeniculum vulgare in mice model. Int J Pharm Pharm Sci, 4, 584-586.

Osterlund, M. K., Witt, M.-R. & Gustafsson, J.-A. 2005. Estrogen action in mood and neurodegenerative disorders: Estrogenic compounds with selective properties-the next generation of therapeutics. Endocrine, 28, 235-242.

Perveen, T., Hashmi, B. M., Haider, S., Tabassum, S., Saleem, S. & Siddiqui, M. A. 2013. Role of monoaminergic system in the etiology of olive oil induced antidepressant and anxiolytic effects in rats. ISRN Pharmacology, 2013, 5.

Schaechter, J. D. & Wurtman, R. J. 1989. Tryptophan availability modulates serotonin release from rat hypothalamic slices. Journal of Neurochemistry, 53, 1925-1933.

Shri, R. 2010. Anxiety: Causes and management. International Journal of Behavioral Science (IJBS), 5.





videos balancecure

اسے دیں



ہمارے خبری خطوط کی تائید کریں


تبصرے

کوئی تبصرے نہیں

تبصرہ شامل کریں

Made with by Tashfier

loading gif
feedback